No salaries for public servants as Sindh makes COVID-19 vaccination mandatory for every citizens UrduLight.com

جو سرکاری ملازم کرونا ویکیسن نہیں لگوائے گا اُسکو تنخواہ نہیں ملے گی – حکومت نے بڑا اعلان کر دیا

سرکاری ملازمین کے لئے تنخواہوں کی کوئی تنخواہ نہیں ہے کیونکہ سندھ ہر شہری کے لئے COVID-19 ویکسینیشن لازمی قرار دیتا ہے
کراچی (اُردولائٹ تازہ ترین خبریں) وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے صوبائی وزارت خزانہ کو ہدایت کی ہے کہ وہ سرکاری ملازمین کی تنخواہ بند کریں جو کوویڈ 19 کے خلاف ٹیکے لگانے سے انکار کر رہے ہیں۔

وزیراعلیٰ نے گذشتہ سال سے وبائی بیماری شروع ہونے کے بعد سے پاکستان میں ہزاروں افراد کی جانیں لے جانے والے وائرس کی بحالی سے بچنے کے اقدام میں صوبے کے ہر شہری کو کورونا وائرس سے بچاؤ کے قطرے پلانے کو لازمی قرار دے دیا ہے۔

جمعرات کو کراچی میں کورون وائرس سے متعلق صوبائی ٹاسک فورس کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے ، انہوں نے محکمہ صحت کو ہدایت کی کہ وہ صوبے کے ہر کونے اور کونے میں ویکسینیشن کوریج کی سہولیات قائم کریں۔

مراد علی شاہ نے چیف سکریٹری کو ہدایت کی کہ وہ تمام سرکاری ملازمین کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلانے کے لئے ایک مہینہ دیں اور جو اہلکار جولائی 2021 سے ناکام ہوجاتے ہیں ان کی تنخواہیں بند کردیں۔

انہوں نے کہا کہ شہریوں کو محفوظ بنانے کے لئے سخت اقدامات اٹھائے جارہے ہیں ، انہوں نے مزید کہا کہ وہ دیہی علاقوں میں کم از کم 300 ویکسینیشن مراکز چاہتے ہیں جس کا ہدف ہے کہ وہ روزانہ 30،000 افراد کو قطرے پلائیں۔

انہوں نے محکمہ صحت کو ہدایت کی کہ وہ ہر تالہ سطح پر پانچ موبائل ویکسی نیشن ٹیمیں تشکیل دیں جو روزانہ کم از کم 60،000 افراد کو قطرے پلانے کا ہدف رکھتے ہیں۔

وزیر اعلی نے محکمہ صحت کو ہدایت کی کہ وہ اس ویکسین مہم میں مزید نجی اسپتالوں کو شامل کرنے کے لئے صوبے کے 90 نجی اسپتالوں کو 10،000 قطرے پلانے کا ہدف تفویض کریں۔

سکریٹری صحت ڈاکٹر کاظم جتوئی نے اجلاس کو بتایا کہ اب تک 1،550 ، 553 خوراکیں دی گئیں ، ان میں سے پہلی خوراک میں 1،121،402 اور دوسری خوراک میں 429،223 خوراکیں دی گئیں۔

اجلاس کو بتایا گیا کہ 29 مئی کی شام کوسندھ میں ہندوستانی متغیر کے 4 مقدمات کی نشاندہی کی گئی۔ متاثرہ مسافروں کی عراق اور عمان کی سفری تاریخیں تھیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں