نوازشریف نے ملک میں قبل از وقت انتخابات کی حمایت کر دی

نواز شریف قبل از وقت انتخابات کے حق میں

نوازشریف کی پارٹی کی سینئر قیادت سے مرکز میں حکومت چھوڑنے کے آپشن پر بات چیت







اسلام آباد(اردولائٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 جولائی 2022ء) سابق وزیراعظم نوازشریف نے ملک میں قبل از وقت انتخابات کی حمایت کر دی۔جیو نیوز کی رپورٹ کے مطابق نوازشریف نے پارٹی کی سینئر قیادت سے مرکز میں حکومت چھوڑنے کے آپشن پر بات کی ہے۔نوازشریف وزیراعظم شہباز شریف سمیت پارٹی کے اعلی رہنماؤں اور پی ڈی ایم سے بھی کئی بار اس پر بات کر چکے ہیں۔رپورٹ کے مطابق نوازشریف نے مشورہ دیا کہ حکومت میں مزید رہنا مسائل کو حل کرنے کے بجائے مزید مسائل پیدا کرنے کا عندیہ دے رہا ہے۔جب کہ حکومت کو تمام ریاستی اداتوں سے حقیقی حمایت حاصل ہونی چاہئیے تھی۔رپورٹ کے مطابق آصف زرداری اور مولانا فضل الرحمان سمیت پی ڈی ایم رہنماؤں نے اب تک حکومت چھوڑنے کی تجویز کی مخالفت کی لیکن پرویز الہیٰ کو پنجاب کا وزیراعلیٰ بنانے کے سپریم کورٹ کے فیصلے سے اس کے امکان دکھائی دے رہے ہیں۔

نوازشریف نے اپنی پارٹی رہنماؤں کو بتایا کہ عمران خان کی عدم اعتماد کے ووٹ میں برطرفی کے بعد شہباز شریف کی حکومت کے لیے شروع سے ہی رکاوٹیں کھڑی کی گئیں۔اختیارات نہ ہونے کی صورت میں حکومت میں رہنے سے پارٹی کو نقصان ہو سکتا ہے۔دوسری جانب سابق وزیر اعظم اور سربراہ مسلم لیگ ق چوہدری شجاعت حسین کا کہنا ہے پاکستان میں اتنا بڑا بحران آیا کہ ملکی معیشت برے طریقے سے متاثر ہوئی،سیاسی جماعتیں اختلافات نہیں بھولنا چاہتی،نہ بھلائیں۔ انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ اس وقت عام آدمی مہنگائی سے پریشان ہے،مل بیٹھ کر حل نکالیں۔اختیار رکھنے والے لوگ معیشت کے حل کیلئے سوچ و بچار کریں اور عملی اقدامات پر غور کریں۔ موجودہ حالات میں ورکنگ ریلیشن شپ ہونا چاہیے۔ چوہدری شجاعت حسین کا کہنا تھا کہ جو ہو رہا ہے لوگ سمجھ رہے ہیں کہ اسکی سیاسی وجوہات ہیں،سیاسی وجوہات ضروری ہوں گی مگر اس سے عام آدمی کو کوئی فرق نہیں پڑتا۔ غریب آدمی کو غرض نہیں کہ سیاست کھیل رہے ہیں یا نہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں